Ahmadi Muslims hold the unique belief that Jesus (peace be upon him) survived the crucifixion and travelled towards India to continue his ministry among the Lost Tribes of Israel. Furthermore, they claim that his tomb, containing his body, has been recently re-discovered in India where it can be seen to this day. Ahmadi Muslims also assert that this belief is not only upheld by the Holy Quran and the Sayings of Muhammad saw, but even by the Holy Bible itself.
16 March 2014

وفاتِ مسیح ؑ پر صحابہ ؓ کا اجماع

وفاتِ مسیح ؑ پر صحابہ ؓ کا اجماع


 سیدنا حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ کی وفات کے بعد صحابہ کرام رضوان اللہ علیھم اجمعین کا سب سے پہلا اجماع   اسی بات پر ہوا تھا کہ تمام گزشتہ انبیاء بشمول حضرت عیسیٰ علیہ السلام وفات پا چکے ہیں ۔ چنانچہ حضرت عمر ؓ اور  کئی دیگرصحابہ نے شدت محبت اور غم کی وجہ سے حضور ﷺ کو وفات یافتہ تسلیم کرنے سے انکار کردیا۔ تب  حضرت ابوبکر ؓ تشریف لائے اور سورۃ آل عمران کی آیت نمبر 145 تلاوت فرمائی ۔
                                                                                                           
             وَمَا مُحَمَّدٌ اِلَّا رَسُوْلٌ قَدْ خَلَتْ مِنْ قَبْلِہِ الرُّسُل

   یعنی محمد ؐ صرف ایک رسول ہیں۔ اور ان سے پہلے سب رسول فوت ہوچکے ہیں ۔ یہ آیت سن کر صحابہ نے   حضور ﷺ کو فوت شدہ مان لیا ۔اور اس بات کے خلاف کچھ بھی نہیں بولے۔ اگر کوئی ایک صحابی بھی    حضرت عیسیٰ ؑ کو زندہ سمجھتا تو وہ کہہ سکتا تھا کہ اگر حضرت عیسیٰ رسول ہو کر اب تک زندہ ہیں تو آنحضرتؐ  کیونکر فوت ہوسکتے ہیں ۔
                                                                      (بخاری کتاب المغازی باب مرض النبی )

button

    اجماع صحابہ کی جھلک بحرین میں
 فرقہ اہلحدیث کے بانی محمد بن عبدالوہاب تحریر فرماتے ہیں ۔ حضور ﷺ کی وفات کے بعد بحرین کے کئی لوگ  اس بات سے مرتد ہوگئے کہ اگر حضور ﷺ رسول ہوتے تو ہرگز فوت نہ ہوتے ۔ تب صحابی رسول حضرت  جارود بن معلی رضی اللہ عنہ نے ان سے خطاب کیا اور فرمایا آنحضرت ﷺ اللہ کے بندے اور رسول ہیں ۔  آپ ویسے ہی زندہ رہے جیسے حضرت موسیٰ ؑ اور عیسیٰ ؑ زندہ رہے اور اسی طرح انتقال کرگئے جیسے حضرت موسیٰ  اور حضرت عیسیٰ ؑ نے وفات پائی ۔ یہ سن کر سب لوگ اسلام میں واپس آگئے
 (مختصر سیرۃ الرسول ؐ صفحہ ۱۸۷ از محمدبن عبدالوہاب دارلعربیہ بیروت لبنان)

 سیدنا حضرت مرزا غلام احمد صاحب قادیانی مسیح موعود و مہدی ؑ فرماتے ہیں:۔
اور یاد رہے کہ یہ دلیل جو حضرت ابوبکر نے تمام گذشتہ نبیوں کی وفات پر پیش کی کسی صحابی سے اِس کا انکار مروی نہیں حالانکہ اُس وقت سب صحابی موجود تھے اور سب سن کر خاموش ہوگئے ۔ اِس سے ثابت ہے کہ اس پر صحابہ کااجماع ہوگیا تھا اور صحابہ کااجماع حجّت ہے جو کبھی ضلالت پر نہیں ہوتا۔ 

About Me

Kashif Khalid is a student in Jamia Ahmadiyya Qadian. He had devoted his life to the service of Ahmadiyyat the true Islam . Add him on: Facebook & Twitter

  • Share to Facebook
  • Share to Twitter
  • Share to Google+
  • Share to Stumble Upon
  • Share to Evernote
  • Share to Blogger
  • Share to Email
  • Share to Yahoo Messenger
  • More...

0 comments:

Post a Comment